Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا منگنی کے بعد لڑکا لڑکی اکیلے سفر کر سکتے ہیں؟

کیا منگنی کے بعد لڑکا لڑکی اکیلے سفر کر سکتے ہیں؟

موضوع: منگنی

سوال پوچھنے والے کا نام: حسنین خالد       مقام: اسلام آباد

سوال نمبر 2783:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ میری منگنی ہو گئی ہے شریعت کے حدود سے آگاہ فرمائیں کہ ہم دونوں اکیلے سفر کر سکتے ہیں یا نہیں؟ کہیں Tour پر جا سکتے ہیں؟

جواب:

جب تک نکاح قائم نہ ہو جائے آپ دونوں اکیلے سفر نہیں کر سکتے، نہ ہی کہیں Tour پر جا سکتے ہیں۔ کیونکہ صرف منگنی سے لڑکا لڑکی ایک دوسرے کے لیے حلال نہیں ہو جاتے جب تک نکاح نہ جائے۔ آج کل اس سوچ کو فروغ دیا جا رہا ہے کہ نکاح سے پہلے ہی اپنی منگیتر کو ساتھ لے کر کبھی شاپنگ کے بہانے، کبھی Tour اور کبھی دوست کے گھر جانے کے بہانے سے اکیلے ہی پھرتے رہتے ہیں، اور نکاح سے پہلے ہی اللہ تعالی کی حدوں کو توڑ بیٹھتے ہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2013-09-09


Your Comments