Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - عالم اور صوفی میں‌ کیا فرق ہے؟

عالم اور صوفی میں‌ کیا فرق ہے؟

موضوع: متفرق مسائل

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد اقبال صدیق       مقام: یو ایس اے

سوال نمبر 854:
عالم اور صوفی میں‌ کیا فرق ہے۔ تفصیل سے واضح فرما دیں۔

جواب:
عام طور پر لوگوں کے ذہن میں یہ بات موجود ہوتی ہے کہ صوفی وہ ہے جسے دنیا کا پتہ نہ ہو یعنی وہ ننگے سر اور ننگے پاؤں ہو وغیرہ وغیرہ۔ اور عالم وہ ہے جو کسی مدرسہ سے فارغ التحصیل ہو۔

حقیقت حال یہ ہے کہ عالم اور صوفی میں کوئی خاص فرق نہیں ہے۔

انما الفقيه المعرض عن الدنيا والراغب فی الاخرة.

عالم یا صوفی وہ ہوتا ہے جو دنیا سے بے رغبت ہو اور آخرت کے لیے تیاری کرنے والا ہو۔

لہذا ہر عالم صوفی اور ہر صوفی عالم اس لیے ہے کہ صوفی اگر بغیر علم عبادت کرتا رہے تو کوئی فائدہ نہیں۔ اتنا علم فرض عین ہے جیسے حرام، حلال کا جاننا، پاک اور ناپاک کا معلوم ہونا، حقوق اللہ اور حقوق العباد کا جاننا ضروری ہے۔ البتہ بعض علماء ایسے ہوتے ہیں کہ الحمدللہ انہیں دنیا میں رغبت کم اور آخرت کی فکر زیادہ ہوتی ہے۔ اس لیے صوفی وہ ہوتا ہے جس پر علم کے ساتھ ساتھ فکر آخرت کا غلبہ زیادہ ہو۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

تاریخ اشاعت: 2011-04-01


Your Comments