اگر نماز میں کوئی سورت بھول جائے تو اسے چھوڑ کر دوسری سورت پڑھنا کیسا ہے؟

سوال نمبر:5600
السلام علیکم مفتی صاحب! اگر نماز میں کوئی سورت پڑھتے پڑھتے اس سورت میں سے کوئی آیت بھول جائے اور وہ سورت چھوڑ کر کوئی دوسری سورت مکمل پڑھی۔ کیا اس سے سجدہ سہو واجب ہوتا ہے یا نہیں؟ اور اگر سجدہ سہو نماز پڑھنے کے آدھے گھنٹے بعد یاد آئے تو اس نماز کا کیا حکم ہے؟

  • سائل: ایاز محبوبمقام: ابوظہبی
  • تاریخ اشاعت: 28 دسمبر 2019ء

زمرہ: نماز

جواب:

آپ کے دونوں سوالوں کے جوابات بالترتیب درج ذیل ہیں:

1۔ اگر نمازی نے ایک سورت بھولنے کی وجہ اسے چھوڑ کر کوئی دوسری سورت پڑھ لی تو اس پر سجدہ سہو واجب نہیں۔ بہتر یہ ہے کہ فرائض کی ادائیگی کے دوران تین آیات کی تلاوت کے بعد نمازی رکوع کر لے۔

2۔ اگر کسی پر سجدہ سہو لازم ہو اور نماز کی ادائیگی کے بعد اسے یاد آئے تو نماز لوٹا لے کیونکہ سجدہ سہو نہ کرنے کی صورت میں نماز ناقص رہے گی۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟