Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا مجبوری کی حالت میں دی گئی طلاق واقع ہوجاتی ہے؟

کیا مجبوری کی حالت میں دی گئی طلاق واقع ہوجاتی ہے؟

موضوع: طلاق

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد ابراہیم       مقام: انڈیا

سوال نمبر 3845:
السلام علیکم! جبراً لی گئی طلاق کیا کیا حکم ہے؟ میری بیوی نے مجھے ڈرا دھمکا کر مجھ سے طلاق لی ہے، کیا زبردستی لی گئی طلاق واقع ہوجاتی ہے؟

جواب:

اگر آپ کی بیوی نے واقعتاً آپ پر اس قدر جبر کیا کہ آپ کو جان جانے یا انتہائی خطرناک صورتِ حال کا یقین تھا تو طلاق واقع نہیں ہوئی۔ لیکن قابلِ غور بات یہ ہے کہ جو بیوی آپ سے جبراً طلاق لے رہی ہے اس کے ساتھ رہنا آپ کے لیے نقصاندہ ثابت ہوسکتا ہے۔ زبردستی اسے نکاح میں رکھنے کی کوشش میں آپ کہیں ناقابلِ تلافی نقصان کا شکار نہ ہوجائیں۔ مکرہ (مجبور) کی طلاق کی مزید وضاحت کے لیے ملاحظہ کیجیے:

مکرہ کی طلاق کا شرعی حکم کیا ہے؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2016-04-18


Your Comments