Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا دیور اور بھابھی آمنے سامنے یا موبائل پر بات کر سکتے ہیں؟

کیا دیور اور بھابھی آمنے سامنے یا موبائل پر بات کر سکتے ہیں؟

موضوع: متفرق مسائل

سوال پوچھنے والے کا نام: نعمان مجید       مقام: کامونکی

سوال نمبر 1466:
بالغ دیور اور بھابھی آمنے سامنے بیٹھ کے یا موبائل پر گفتگو کریں تو شریعت اس بارے میں کیا احکام جاری کرتی ہے؟

جواب:

بالغ دیور اور بھابھی کا آمنے سامنے بیٹھ کر یا موبائل فون پر گفتگو کرنا شرعی طور پر جائز نہیں ہے۔ دیور، جیٹھ، بھابھی کے لیے غیر محرم ہیں، حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے دیور اور بھابھی کے بارے میں پوچھا گیا تو فرمایا

الحمو الموت

دیور موت ہے۔

لہذا شرعی طور پر دیور اور بھابھی بغیر ضرورت کے نہ تو آمنے سامنے بیٹھ کر گفتگو کر سکتے ہیں، اور نہ موبائل پر۔ اس سے ہی گھر میں فتنہ و فساد پیدا ہوتا ہے اور گھر اجڑتے ہیں، اسی وجہ سے حضور علیہ الصلوٰۃ والسلام نے دیور کو موت کہا ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

تاریخ اشاعت: 2012-03-06


Your Comments