Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا ایک سنی ایک شیعہ امام کے پیچھے باجماعت نماز ادا کر سکتا ہے؟

کیا ایک سنی ایک شیعہ امام کے پیچھے باجماعت نماز ادا کر سکتا ہے؟

موضوع: نماز  |  عبادات  |  امامت   |  شرائط امامت

سوال پوچھنے والے کا نام: حسن شاہ       مقام: جرمنی

سوال نمبر 1127:
کیا ایک سنی ایک شیعہ امام کے پیچھے اپنی واجب نماز باجماعت ادا کر سکتا ہے؟ مہربانی کر کے میری مشکل حل فرما دیجیئے، میں آپکا بہت شکر گزار ہوں گا۔

جواب:

کوئی بھی شخص اگر امہات المومنین، صحابہ کرام، اولیاء کرام یا انبیاء علیہم السلام کا گستاخ ہو تو اس کے پیچھے نماز نہیں ہوتی، لیکن یہ ضروری ہے کہ یہ ثابت ہو کہ وہ گستاخی کرتا ہے، صرف کسی سے سننے سے اس شخص کو گستاخ نہ کہا جائے۔ بلکہ خود اس شخص کو گستاخی کرتے ہوئے سنا ہو یا اس کی گستاخی پر مبنی کوئی تحریر پڑھی ہو تو پھر بہتر ہے کہ اکیلا نماز پڑھے۔ اگر کوئی اور ساتھی صحیح العقیدہ مل جائے تو دو آدمی بھی با جماعت نماز پڑھ سکتے ہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

تاریخ اشاعت: 2011-07-13


Your Comments