اگر بندہ جماعت کے ساتھ دوسری، تیسری یا چوتھی رکعت میں‌ ملتا ہے تو کیا اس کو ثنا پڑھنی چاہیے یا نہیں؟

سوال نمبر:961
اگر بندہ جماعت کے ساتھ دوسری، تیسری یا چوتھی رکعت میں‌ ملتا ہے تو کیا اس کو ثنا پڑھنی چاہیے یا نہیں؟ جب کہ رہ جانے والی رکعات پڑھ رہا ہوں تو ان کے ساتھ پڑھی۔ برائے مہربانی جاری و ساری نمازوں کی علیحدہ علیحدہ وضاحت فرما دیں۔

  • سائل: محمد اکرممقام: تلہ گنگ
  • تاریخ اشاعت: 11 مئی 2011ء

زمرہ: عبادات  |  نمازِ باجماعت کے احکام و مسائل  |  نماز

جواب:
صورت مسؤلہ میں چونکہ مقتدی کی پہلی رکعت رہ گئی ہے اس لیے جب وہ امام کے سلام پھیرنے کے بعد کھڑا ہوگا اور پہلی رکعت خود پڑھے گا تو اس رکعت میں وہ ثنا پڑھے گا، ثنا کا پڑھنا سنت ہے۔

اگر مقتدی دوسری، تیسری یا پھر چوتھی رکعت میں جماعت سے ملا ہے تو پھر اس کو ثنا نہیں پڑھنی چاہیے بلکہ امام کے سلام پھیرنے کے بعد جب پہلی رکعت کے لیے کھڑا ہوگا تو اس میں ثنا پڑھے باقی رکعتوں میں ثنا نہیں پڑھی جائے گی۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟