Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - نماز وتر میں دعائے قنوت پڑھنے کے لئے تکبیر کیوں کہی جاتی ہے؟

نماز وتر میں دعائے قنوت پڑھنے کے لئے تکبیر کیوں کہی جاتی ہے؟

موضوع: زکوۃ  |  نماز وتر

سوال پوچھنے والے کا نام: فیصل اکرم       مقام: نواب شاہ، سندھ، پاکستان

سوال نمبر 831:
نماز وتر میں دعائے قنوت پڑھنے کے لئے تکبیر کیوں کہی جاتی ہے اور اس کے لئے ہاتھ اٹھانے کادرست طریقہ بھی بتا دیں کہ کیا ہاتھ نیچے لے جاکر اٹھائے جائیں یابغیر نیچے لے جائے اٹھا کر کانون کی لو کولگا لیے جائیں۔

جواب:
نماز وتر میں تکبیر اس لیے کہی جاتی ہے کیونکہ آقا علیہ الصلوۃ والسلام کا فرمان ہے :

لاترفع الايدی الا فی سبع مواطن.

کہ ہاتھ نہ اٹھایا جائے مگر سات جگہوں میں۔

(شامی، 1 : 506)

  • تکبیر تحریمہ
  • دعائے قنوت
  • تکبیرات عیدین
  • استلام الحجر
  • صفا مروہ میں
  • عرفات میں
  • شیطان کو کنکریاں مارنے کے وقت

یہ سنت ہے۔

مسنون طریقہ یہ ہے کہ ہاتھ نیچے لیے جائے بغیر اٹھا کر کانوں کی لو تک لگائے جائیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

تاریخ اشاعت: 2011-03-29


Your Comments