خطبہ سننے کے دوران میں کس طرح بیٹھنا چاہیے؟

سوال نمبر:817
خطبہ سننے کے دوران میں کس طرح بیٹھنا چاہیے؟ عموماً پہلے خطبے میں ہاتھ باندھے جاتے ہیں اور دوسرے خطبے میں ہاتھ رانوں پر رکھے جاتے ہیں۔ اس کی شرعی حیثیت کیا ہے؟

  • سائل: محمد فاروقمقام: پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 24 مارچ 2011ء

زمرہ: نماز جمعہ

جواب:
’الفتاویٰ الھندیۃ (1:148)‘ المعروف ’فتاویٰ عالمگیری‘ کے مطابق دونوں خطبوں کے دوران میں اس طرح بیٹھنا مستحب ہے جس طرح نماز میں بیٹھا جاتا ہے۔ اگر سامع کسی اور طرح بیٹھ جائے تب بھی کوئی حرج نہیں کیوں کہ یہ نہ عملًا نماز میں ہے نہ حقیقتاً۔

مفتی احمد یار خان نعیمی نے ’مرآۃ المناجیح (2:338)‘ میں لکھا ہے کہ خطبہ جمعہ سننے کے دوران میں اس طرح بیٹھنا کہ پہلے خطبے میں ہاتھ باندھے ہوں اور دوسرے خطبے میں ہاتھ رانوں پر رکھے ہوں، اس سے دو رکعت نفل کا ثواب ملتا ہے۔ مگر مفتی احمد یار خان نعیمی کے اس قول کی کوئی شرعی حجت نہیں ہے۔

لیکن بہتر یہی ہے کہ خطبہ سننے کے دوران میں منظم انداز میں دو زانو ہو کر اس طرح بیٹھا جائے کہ پہلے خطبے میں ہاتھ باندھے ہوں اور دوسرے خطبے میں ہاتھ رانوں پر رکھے ہوں۔ اس سے ایک نظم بھی پیدا ہوگا اور ایک ترتیب بھی قائم رہے گی۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟