Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - خانہ کعبہ اور روضہ رسول (ص) کی طرف پاؤں پھیلا کر بے پرواہ سونے کے بارے میں‌ شریعت کا کیا حکم ہے؟

خانہ کعبہ اور روضہ رسول (ص) کی طرف پاؤں پھیلا کر بے پرواہ سونے کے بارے میں‌ شریعت کا کیا حکم ہے؟

موضوع: جدید فقہی مسائل

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد اکرم سعیدی       مقام: جدہ، سعودی عرب

سوال نمبر 752:
یہاں حرمین شریفین میں عام طور سے مشاہدہ میں آیا ہے کہ بعض لوگ مسجد حرام میں خانہ کعبہ کی طرف اور اسی طرح مسجد نبوی شریف میں روضہ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی طرف پاؤں پھیلا کر بے پرواہ سو رہے ہوتے ہیں، اس بارے میں شریعت مطہرہ میں کیا حکم ہے؟

جواب:
حرمین شریفین کا ادب و احترام تمام مسلمانوں پر لازم ہے لہذا سوتے وقت کعبہ شریف اور روضہ اقدس کی طرف پاؤں پھیلانا صحیح نہیں ہے۔ اس لیے وہاں پر ہر قسم کی بے ادبی سے بچنا چاہیے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

تاریخ اشاعت: 2011-03-11


Your Comments