Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا آگ کے سامنے نماز ہو جائے گی؟

کیا آگ کے سامنے نماز ہو جائے گی؟

موضوع: جدید فقہی مسائل  |  مکروہ

سوال پوچھنے والے کا نام: احمد حسن       مقام: اسلام آباد، پاکستان

سوال نمبر 740:
نمازی کے سامنے اگر آگ جل رہی ہو (جیسا کہ سردیوں میں تمام مساجد میں نمازیوں کے سامنے گیس کے ہیٹر جل رہے ہوتے ہیں) تو کیا اس صورت میں نمازی کی نماز ہو جائے گی؟

جواب:

نمازی کے سامنے آگ جل رہی ہو تو نماز ہو جائے گی فقط کراہت ہے لیکن مخصوص طریقے سے انتظام کیا گیا ہو تو مکروہ نہیں ہے۔ مثلاً ہیٹر وغیرہ۔

فتاوی عالمگیری میں ہے کہ :

وَمن توجّه فی صلٰوته تنورٍ فيه نارً

عالمگيري، 1 : 108

اور جو شخص نماز کے دوران تندور کی طرف متوجہ ہوا جس میں آگ جل رہی تھی تو یہ مکروہ ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

تاریخ اشاعت: 2011-03-07


Your Comments