Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا پاؤں پر مٹی لگنے وضو ٹوٹ جاتا ہے؟

کیا پاؤں پر مٹی لگنے وضو ٹوٹ جاتا ہے؟

موضوع: وضوء

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد ارشد       مقام: اٹک

سوال نمبر 4677:
مفتی صاحب! وضو کے بعد اگر گیلے پاؤں جوتے رکھنے والی جگہ پر رکھ دیئے جائیں اور ان پر مٹی لگ جائے تو کیا ناپاک ہوں گے اور دھوئے بغیر نماز پڑھ لیں تو اس کا کیا حکم ہے؟ (عموماً یہ صورتحال ان مساجد میں پیش آتی ہے جہاں وضو خانے کے قریب مسجد کا دروازہ ہوتا ہے)۔

جواب:

پاؤں کو مٹی لگنا نواقضِ وضو میں‌ سے نہیں‌ ہے‘ اس سے وضو پر کوئی اثر نہیں‌ پڑتا جب تک یقین نہ ہو جائے کہ کوئی گندگی جسم پر لگ گئی ہے۔ اگر کوئی نجاست یا گندگی پاؤں سے لگ جائے تو صرف پاؤں دھو کر نماز ادا کر سکتے ہیں دوبارہ وضو کرنے کی ضرورت نہیں۔ اگر صرف مٹی پاؤں سے لگی ہے تو کوشش کریں‌ کہ مسجد کی طہارت اور صفائی کو ملحوظ رکھتے ہوئے پاؤں دھو لیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2018-02-16


Your Comments