Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا جنگلی گدھا حلال ہے؟

کیا جنگلی گدھا حلال ہے؟

موضوع: کھانے کے آداب   |  حلال کھانے   |  حرام کھانے

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد تنویر       مقام: کراچی

سوال نمبر 3750:
کیا جنگلی گدھا حلال ہے؟ گھریلو گدھے کی حرمت کہاں سے ثابت ہے؟

جواب:

جنگلی گدھا، جسے گور خر کہتے ہیں حلال ہے۔ احادیث صحیحہ سے گھریلو گدھے کے گوشت کی حرمت واضح ہوتی ہے۔ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے جنگ خیبر کے موقع پر پالتو گدھے کے گوشت کو حرام قرار دیا تھا۔ آئمہ سلف و خلف اور جملہ علماء کا پالتو گدھے کے گوشت کی حرمت پر اجماع ہے۔ رسول اکرم صلیٰ اللہ علیہ وآلہ وسلم کا ارشاد ہے:

أنَّ أبَا ثَعْلَبَةَ قَالَ حَرَّمَ رَسُولُ اﷲِ صلی الله عليه وآله وسلم لُحُومَ الْحُمُرِ الْأهْلِيَّةِ.

’’حضرت ابو ثعلبہ رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ رسول اﷲ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے پالتو گدھوں کا گوشت حرام فرمایا ہے‘‘۔

  1. بخاری، الصحيح، 5 : 2102، رقم : 5206، دار ابن کثير اليمامة بيروت
  2. مسلم، الصحيح، 3 : 1538، رقم : 1936، دار احياء التراث العربی

عَنْ جَابِرِ بْنِ عَبْدِ اﷲِ رضي اﷲ عنهما قَالَ نَهَی رَسُولُ اﷲِ صلی الله عليه وآله وسلم يَوْمَ خَيْبَرَ عَنْ لُحُومِ الْحُمُرِ الْأهْلِيَةِ وَرَخَّصَ فِي الْخَيْلِ.

’’حضرت جابر بن عبداللہ رضی اﷲ عنہما سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے خیبر کے روز پالتو گدھوں کا گوشت کھانے سے منع فرمایا اور گھوڑے کے گوشت کی رخصت فرمائی۔‘‘

  1. بخاری، الصحيح، 4 : 1544، رقم : 3982
  2. مسلم، الصحيح، 3 : 1541، رقم : 1941

لہٰذا گھریلو یا پالتو گدھے کی حرمت رسول اکرم صلیٰ اللہ علیہ وآلہ وسلم کے فرمان سے ثابت ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2016-01-30


Your Comments