کیا طلاق کی مؤثریت کے لیے بیوی کی رضامندی ضروری ہے؟

سوال نمبر:3662
السلام علیکم! میرا سوال یہ ہے کہ اگر بیوی کی مرضی نہ ہو اور شوہر طلاق دے تو کیا طلاق واقع ہو جاگی؟ بیوی طلاق نہیں چاہتی تھی اور اس کے ساتھ رہنا چاہتی تھی۔ طلاق کو دو سال کا عرصہ ہو چکا ہے۔

  • سائل: عظمی چوھدریمقام: برطانیہ
  • تاریخ اشاعت: 16 جون 2015ء

زمرہ: طلاق

جواب:

شوہر جب بلا جبر و اکرہ، ہوش و حواس میں طلاق دے تو طلاق واقع ہوجاتی ہے، خواہ بیوی طلاق چاہتی ہو یا نہ چاہتی ہو۔

آپ نے اپنے سوال میں اس بات کی وضاحت نہیں کی کہ شوہر نے بیوی کو طلاقِ رجعی دی، طلاقِ بائن دی یا طلاقِ مغلظہ دی؟ اگر سوال میں مکمل حالات و واقعات لکھ کر ارسال کیئے جائیں تو طلاق کے واقع ہونے یا نہ ہونے کا فیصلہ کرنا آسان ہوگا۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟