Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا طلاق کی مؤثریت کے لیے بیوی کی رضامندی ضروری ہے؟

کیا طلاق کی مؤثریت کے لیے بیوی کی رضامندی ضروری ہے؟

موضوع: طلاق

سوال پوچھنے والے کا نام: عظمی چوھدری       مقام: برطانیہ

سوال نمبر 3662:
السلام علیکم! میرا سوال یہ ہے کہ اگر بیوی کی مرضی نہ ہو اور شوہر طلاق دے تو کیا طلاق واقع ہو جاگی؟ بیوی طلاق نہیں چاہتی تھی اور اس کے ساتھ رہنا چاہتی تھی۔ طلاق کو دو سال کا عرصہ ہو چکا ہے۔

جواب:

شوہر جب بلا جبر و اکرہ، ہوش و حواس میں طلاق دے تو طلاق واقع ہوجاتی ہے، خواہ بیوی طلاق چاہتی ہو یا نہ چاہتی ہو۔

آپ نے اپنے سوال میں اس بات کی وضاحت نہیں کی کہ شوہر نے بیوی کو طلاقِ رجعی دی، طلاقِ بائن دی یا طلاقِ مغلظہ دی؟ اگر سوال میں مکمل حالات و واقعات لکھ کر ارسال کیئے جائیں تو طلاق کے واقع ہونے یا نہ ہونے کا فیصلہ کرنا آسان ہوگا۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2015-06-16


Your Comments