Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - عورت کے لیے کن اعضاء چھپانا واجب نہیں ہے؟

عورت کے لیے کن اعضاء چھپانا واجب نہیں ہے؟

موضوع: معاشرتی آداب

سوال پوچھنے والے کا نام: مسز لقمان       مقام: لاہور

سوال نمبر 3540:
السلام علیکم! عورت کے لیے ہاتھ اور پاؤں کا پردہ ہے یا نہیں؟ اور عورت کے ہاتھ کی انگو ٹھیاں اور چوڑیاں اگر نامحرم دیکھتے ہیں کیونکہ عورت ہاتھوں کا پردہ نہیں کرتی تو اس کے لیے کیا حکم ہے؟

جواب:

عورت کے لیے ہاتھ، پاؤں اور چہرے کا چھپانا واجب نہیں، جبکہ بقیہ سارے جسم کو چھپانا ضروری ہے۔ جس طرح عورت پر پردہ واجب ہے اسی طرح مرد کے لیے نگاہیں نیچی رکھنا اور غیر محرم عورتوں کو نہ دیکھنا واجب ہے۔ جب کوئی عورت شرعی پردہ کا اہتمام کر لیتی ہے تو اس کے بعد اس کے ہاتھ پاؤں اور چہرے کو دیکھنے والا مرد گنہگار ہے نہ کہ وہ عورت۔ اس کی مزید وضاحت کے لیے ملاحظہ کیجیے: عورت کے پردے کے بارے میں‌ کیا احکام ہیں؟

عورت کا سارا بناؤ سنگھار اس کے شوہر کے لیے ہے۔ اس کے لیے ضروری ہے کہ اپنے بناؤ سنگھار کو غیر محرموں کے سامنے ظاہر نہ کرے۔ اس کی مزید وضاحت کے لیے ملاحظہ کیجیے:

بناؤ سنگھار کس حد تک اور کس کے لئے جائز ہے؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2015-03-31


Your Comments