کیا نکاح فارم پر دستخط کرنا ایجاب و قبول کے قائم مقام ہے؟

سوال نمبر:3524
السلام علیکم! اگر لڑکی صرف نکاح فارم پر دستخط کرے اور ایجاب و قبول نہ کرے تو کیا نکاح قائم ہو جاتا ہے؟

  • سائل: عبدالرحمٰن ڈوگرمقام: اسلام آباد
  • تاریخ اشاعت: 12 مارچ 2015ء

زمرہ: نکاح

جواب:

اگر کنواری لڑکی شرم و حیا کی وجہ سے زبان جواب نہ دے، لیکن نکاح فارم پر بلا جبر و اکراہ رضامندی سے اس نیت سے دستخط کرے کہ اس کا نکاح ہو رہا ہے تو نکاح قائم ہو جائے گا۔ ایسی عورت جس کی دوبارہ شادی ہو رہی ہو اس کا ایجاب و قبول کے لیے زبان سے بولنا ضروری ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟