Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا نکاح فارم پر دستخط کرنا ایجاب و قبول کے قائم مقام ہے؟

کیا نکاح فارم پر دستخط کرنا ایجاب و قبول کے قائم مقام ہے؟

موضوع: نکاح   |  شرائط نکاح

سوال پوچھنے والے کا نام: عبدالرحمٰن ڈوگر       مقام: اسلام آباد

سوال نمبر 3524:
السلام علیکم! اگر لڑکی صرف نکاح فارم پر دستخط کرے اور ایجاب و قبول نہ کرے تو کیا نکاح قائم ہو جاتا ہے؟

جواب:

اگر کنواری لڑکی شرم و حیا کی وجہ سے زبان جواب نہ دے، لیکن نکاح فارم پر بلا جبر و اکراہ رضامندی سے اس نیت سے دستخط کرے کہ اس کا نکاح ہو رہا ہے تو نکاح قائم ہو جائے گا۔ ایسی عورت جس کی دوبارہ شادی ہو رہی ہو اس کا ایجاب و قبول کے لیے زبان سے بولنا ضروری ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2015-03-12


Your Comments