Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا ایک بار ایجاب وقبول کرنے سے نکاح ہو جاتا ہے؟

کیا ایک بار ایجاب وقبول کرنے سے نکاح ہو جاتا ہے؟

موضوع: نکاح   |  ارکان نکاح

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد حنیف قادری       مقام: اسلام آباد

سوال نمبر 2836:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ نکاح کے وقت “قبول ہے“ مرد اور عورت نے ایک بار کہا۔ کیا یہ الفاظ تین مرتبہ نہیں دہراتے؟ ایک بار اقرار سے نکاح میں کیا فرق پڑتا ہے؟

جواب:

دستور کے مطابق ایک بار ہی ایجاب وقبول کرنے سے نکاح منعقد ہو جاتا ہے، مگر تین بار تاکید کے لیے دہراتے ہیں تاکہ کوئی مغالطہ نہ رہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2013-09-23


Your Comments