بچوں کی تربیت کی نیت سے منصوبہ بندی کرنا کیسا ہے؟

سوال نمبر:2481
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ اگر کوئی یہ سوچ کرکہ مجھ سے زیادہ بچوں کی تربیت ٹھیک نہیں ہو پائے گی تو کیا اس نیت سے بچوں کی منصوبہ بندی کرنا جائز ہے؟ یعنی ایسی دوا کا استعمال کرنا جس سے حمل نہ ہو اور دوسری بات یہ کہ اگر میاں بیوی کی جنسی صحبت ہوئی اور دس دنوں بعد پتا چلا کہ عورت امید سے ہے تو کیا اس صورت میں دوا لینا جائز ہو گا؟ درج بالا بیان کی گئی نیت کے ساتھ جواب درکار ہے۔

  • سائل: مطاہرمقام: گجرات
  • تاریخ اشاعت: 26 مارچ 2013ء

زمرہ: ضبط تولید

جواب:

منصوبہ بندی بھی کروا سکتے ہیں اور 120 دن کے اندر اندر حمل بھی گرا سکتے ہیں، لیکن ڈاکٹر سے مشورہ کرنے کے بعد تاکہ کوئی میڈیکلی برے اثرات نہ پڑیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟