Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - جھوٹا حلف اٹھانا کیسا ہے؟

جھوٹا حلف اٹھانا کیسا ہے؟

موضوع: معاملات  |  قسم کا کفارہ

سوال پوچھنے والے کا نام: عینی       مقام: کراچی

سوال نمبر 2296:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ اگر کوئی لڑکی عزت بچانے کی خاطر اور جان چھڑانے کے لیے قرآن پر ہاتھ رکھ کر حلفا کہے کہ اگر تم مجھے طلاق دلوا دو تو دوسری شادی تم سے کر لوں گی، وہ بھی اس لیے کہ وہ مرد دھمکی دیتا ہو کہ تمہیں طلاق دلا دوں گا۔ یہ حلف کیسا ہے اور کفارہ کیا ہو گا؟ جبکہ حلف کے سوا کوئی راستہ نہ ہو۔

جواب:

جس کام کے لیے حلف اٹھایا اور بعد میں کام نہیں کیا تو قسم کا کفارہ ادا کر دیں۔ آپ خود اچھی طرح سوچ سمجھ کر فیصلہ کریں، اگر جس کے ساتھ شادی کرنے کا حلفاً بیان دیا وہ لڑکا صحیح نہیں ہے تو شادی مت کریں۔ قسم کا کفارہ دے کر جان چھڑا لیں۔

مزید مطالعہ کے لیے یہاں کلک کریں
قسم توڑنے کا کفارہ کیا ہے؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2012-11-19


Your Comments