Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - جان بوجھ کر قرض نہ دینے والے کے لیے شرعی حکم کیا ہے؟

جان بوجھ کر قرض نہ دینے والے کے لیے شرعی حکم کیا ہے؟

موضوع: معاملات  |  قرض کے مسائل

سوال پوچھنے والے کا نام: ایاز علی       مقام: گجرانوالہ، پاکستان

سوال نمبر 2234:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ اسلام میں مقروض کو قرض جلد از جلد واپس کرنے کی کافی نصیحتیں ہیں، جس نے قرض دیا ہے اُسے کیا نصیحتیں کی ہیں۔ جب کہ لوگ اُس کے پیسے واپس نہ کر رہے ہوں، سب کے سب آسودہ حال ہوں، جان بوجھ کر اُس کے پیسے نہ دے رہے ہوں۔ وہ صبر کا دامن کس اُمید سے پکڑے رکھے؟

جواب:

جس نے لوگوں کو قرض دے رکھا ہو اور لوگ خوشحال ہونے کے باوجود بھی اگر اس کا قرض واپس نہ کریں تو وہ دو صورتیں اپنائے۔ پہلے وہ بااثر افراد کے ذریعے ان سے بات چیت کرے تاکہ وہ اس کی رقم واپس کر دیں اگر پھر بھی مسئلہ حل نہ ہو تو قانونی کاروائی کر سکتا ہے، عدالت سے رجوع کرے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2012-11-19


Your Comments