Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - اسلامی نقطہ نظر سے بیمہ پالیسی جائز ہے یا نہیں؟

اسلامی نقطہ نظر سے بیمہ پالیسی جائز ہے یا نہیں؟

موضوع: جدید فقہی مسائل  |  بیمہ و انشورنس   |  انسانوں کی انشورنس   |  گاڑیوں کی انشورنس   |  جائداد کی انشورنس

سوال پوچھنے والے کا نام: خرم امتیاز ملک       مقام: راولپنڈی، پاکستان

سوال نمبر 2068:
السلام علیکم میں ایک پرائیویٹ کمپنی میں جاب کرتا ہوں میں نے آٹھ سال پہلے لائف انشورنس کمپنی میں‌ اپنے پیسے انویسٹ کیے تھے۔ اب میرے پاس تین پالیساں ہیں۔ میں نے اس کے بارے میں بہت کچھ سنا ہے بعض کہتے ہیں حلال ہے بعض کہتے ہیں حرام ہے۔ میں‌ اس بارے میں بہت پریشان ہوں، براہ مہربانی میری پریشانی کو دور کریں اور اسلامی نقطہ نظر سے اس کے بارے میں‌ تفصیلی معلومات فراہم کردیں۔

جواب:

اس سوال کے تفصیلی جواب کے لیے درج ذیل عنوانات کا مطالعہ کریں

  1. کیا لائف انشورنس جائز ہے؟
  2. انشورنس کس حد تک جائز ہے؟
  3. اسٹیٹ لائف کی انشورنس کروانا جائز یا ناجائز ؟
  4. کیا بیمہ پالیسی مطلقاً حرام ہے یا اس کی کچھ صورتیں‌ حلال بھی ہیں؟
  5. کیا انشورنس کے جواز سے متعلق کوئی دلیل بھی ہے؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

تاریخ اشاعت: 2012-08-07


Your Comments