Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا سٹاک ایکسچینج اور فارن ایکسچینج میں شیئرز کی خرید و فروخت کا کاروبار کرنا حلال ہے؟

کیا سٹاک ایکسچینج اور فارن ایکسچینج میں شیئرز کی خرید و فروخت کا کاروبار کرنا حلال ہے؟

موضوع: جدید فقہی مسائل  |  سٹاک ایکسچینج   |  شیئرز کی خرید و فروخت

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد جمیل حُسین       مقام: لاہور، پاکستان

سوال نمبر 1947:
سٹاک ایکسچینج اور فارن ایکسچینج میں شیئرز کی خرید و فروخت کا کاروبار کرنا حلال ہے یا حرام؟

جواب:

اگر کوئی بینک اور کمپنی قرض حسنہ، مضاربہ وغیرہ کے اسلامی اصولوں پر کاروبار کرے تو اس کے حصص خرید سکتے ہیں۔ اس صورت میں نفع و نقصان دونوں کا امکان رہتا ہے، نیز منافع کی رقم میں کمی بیشی ہوتی رہتی ہے اور یہی صورت جائز ہے۔ لیکن اگر کوئی کمپنی یا بینک سودی کاروبار کرتا ہے تو اس میں سرمایہ کاری اور اس پر متعین منافع حاصل کرنا سود کھانا ہے۔ جو کہ کسی مسلمان کے لیے کسی صورت میں بھی جائز نہیں۔ اس سے بچیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2012-07-12


Your Comments