Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا بارش کی وجہ سے نماز مغرب اور عشاء کو ملا کر پڑھنا جائز ہے؟

کیا بارش کی وجہ سے نماز مغرب اور عشاء کو ملا کر پڑھنا جائز ہے؟

موضوع: نماز  |  مغرب   |  عشاء   |  نماز کے اوقات   |  دو نمازیں جمع کرنا   |  نماز با جماعت

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد سہیل انجم       مقام: سعودی عرب

سوال نمبر 1700:
بارش میں مغرب اور عشاء کی نماز کو ملا کر پڑھنے کی شرعی اہمیت کیا ہے؟ سعودی عرب میں تھوڑی سی بارش بھی ہو جائے تو مغرب اور عشاء کو ملا کر پڑھا جاتا ہے۔

جواب:

ایک وقت میں دو نمازیں پڑھنا جائز نہیں ہے۔ اللہ تعالی نے ارشاد فرمایا :

 إِنَّ الصَّلاَةَ كَانَتْ عَلَى الْمُؤْمِنِينَ كِتَابًا مَّوْقُوتًا.

(النِّسَآء ، 4 : 103)

بیشک نماز مومنوں پر مقررہ وقت کے حساب سے فرض ہے۔

لہذا اگر ایک نماز کا وقت ختم ہو جائے تو وہ نماز قضا ہو جاتی ہے۔ البتہ جمع صوری جائز ہے یعنی اگر نماز مغرب اپنے آخری وقت میں اور نماز عشاء اپنے ابتدائی وقت میں جمع کی جائیں تو جائز ہے کیونکہ اس صورت میں دونوں نمازیں اپنے اپنے وقت پر ادا کی گئی ہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

تاریخ اشاعت: 2012-04-29


Your Comments