Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا اپنی‌ منکوحہ غیر مدخولہ مطلقہ کی بیٹی سے نکاح جائز ہے؟

کیا اپنی‌ منکوحہ غیر مدخولہ مطلقہ کی بیٹی سے نکاح جائز ہے؟

موضوع: نکاح   |  غیر مدخولہ کی طلاق

سوال پوچھنے والے کا نام: علی عمران       مقام: جامعہ‌ فریدیہ‌ ساہیوال

سوال نمبر 1536:
اپنی‌ منکوحہ غیر مدخولہ مطلقہ کی بیٹی سے نکاح جائز ہے یا نہیں؟

جواب:

جی ہاں، اپنی منکوحہ غیر مدخولہ مطلقہ کی بیٹی سے نکاح کرنا جائز ہے۔

سورۃ النساء آیت نمبر 23 میں اللہ تعالی نے فرمایا کہ اگر منکوحہ غیر مدخولہ کی بیٹی ہو تو اس سے نکاح کرنے میں کوئی حرج نہیں ہے۔ اس سے نکاح کرنا جائز ہے۔ اگر مدخولہ ہو تو اس کے بعد نکاح حرام ہے۔ چنانچہ قرآن مجید میں ارشاد باری تعالیٰ ہے :

 فَإِن لَّمْ تَكُونُواْ دَخَلْتُم بِهِنَّ فَلاَ جُنَاحَ عَلَيْكُمْ

(النساء، 4 : 23)

پھر اگر تم نے ان سے صحبت نہ کی ہو تو تم پر (ان کی لڑکیوں سے نکاح کرنے میں) کوئی حرج نہیں،

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

تاریخ اشاعت: 2012-03-14


Your Comments