کعبہ کے گرد سات چکر کیوں لگائے جاتے ہیں؟

سوال نمبر:1374
کعبہ کے گرد سات چکر کیوں لگائے جاتے ہیں؟

  • سائل: اقبال شاہ قادری
  • تاریخ اشاعت: 12 جنوری 2012ء

زمرہ: طواف

جواب:

یہ امور تعبدی ہیں۔ ان کا دارومدار سماع پر ہے، جس طرح شارع علیہ السلام سے ہم نے سنا، ویسے ہی عمل کیا جائے گا۔ جیسے نمازوں کی رکعات ہیں، فجر کے دو فرض ہیں۔ اب اگر کوئی یہ پوچھے کہ دو کیوں ہیں چار کیوں نہیں؟ تو یہ ایسے امور ہیں جن پر فقط عمل کیا جائے گا، جیسے حکم ملا کرنے کا ویسے ہی کیا جائے گا۔ ظہر کے چار، عصر کے چار، مغرب کے تین، عشاء کے چار فرائض۔ ان میں کمی بیشی نہیں کی جائے گا۔

مزید مطالعہ کے لیے شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہرالقادری کی کتاب
حج اور عمرہ
کا مطالعہ کریں

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟