حضرت عبدالقادرجیلانی لاکھوں لوگوں تک آواز کیسے پہنچا دیتے تھے؟

سوال نمبر:1316
حضور پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ک صحاابہ کی تعداد بہت زیادہ تھی اور حضور غوث اعظم بھی 70000 لوگوں کے مجمع میں‌ بیان کیا کرتے تھے۔ میں‌ یہ پوچھنا چاہتا ہوں کہ اتنے زیادہ لوگوں کو آواز کیسے پہنچ جاتی تھی؟ تب تو لاؤڈ سپیکر بھی نہیں تھے، اگر ہم اس کو کرامت مان لیں تو پھر تو کوئی بھی ان کا منکر نہیں‌ ہونا چاہیے تھا ان کے دور میں؟ مہربانی فرما کر رہنمائی فرمائیں

  • سائل: ثاقب ریاضمقام: گجرات
  • تاریخ اشاعت: 23 دسمبر 2011ء

زمرہ: روحانیات

جواب:

یہ واقعی غوث پاک رضی اللہ عنہ کی کرامت تھی، ان کی روحانی طاقت تھی، جو اللہ تعالیٰ کی طرف سے اولیاء اللہ کو ملتی ہے۔ جہاں تک سب کے ماننے کا سوال ہے تو حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے بڑھ کر کوئی افضل نہیں، اور بلند ترین شخصیت نہیں ہے۔ انکار کرنے والوں نے تو آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی نبوت کا انکار بھی کیا تھا۔ سب کچھ اپنی آنکھوں سے دیکھ کر بھی نہیں مانا تھا۔ انکار کرنے والے تو اللہ تعالیٰ کی ربوبیت کا بھی انکار کرتے ہیں۔ جب دنیا کے اندر ایسے لوگ موجود ہیں، جنہوں نے اللہ تعالیٰ اور انبیاء علیہم السلام کا انکار واضح نشانیاں دیکھ کر بھی کر دیا تو پھر غوث پاک رضی اللہ عنہ یا کوئی بھی ولی ان کی کرامت یا شخصیات کا انکار زیادہ تعجب خیز نہیں۔ لہذا آپ ایسے لوگوں کی باتوں پر کان نہ دھریں، اور اچھے لوگوں کی سنگت اور صحبت میں وقت گزارا کریں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • وطن سے محبت کی شرعی حیثیت کیا ہے؟