Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا مدینۃ المنورہ اللہ تعالیٰ‌ کا عرش اور عزیز ترین شہر ہے؟

کیا مدینۃ المنورہ اللہ تعالیٰ‌ کا عرش اور عزیز ترین شہر ہے؟

موضوع: متفرق مسائل  |  مزارات

سوال پوچھنے والے کا نام: حسن یوسف       مقام: لائم، ملاوی

سوال نمبر 1187:
کیا یہ سچ ہے کہ جہاں نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم جس جگہ آرام فرما ہیں وہ جگہ عرش ہے اور اللہ تعالیٰ کے نزدیک زیادہ عزیز ہے؟

جواب:

فقہاء کرام نے تصریح کی ہے کہ وہ جگہ جس میں آقا علیہ الصلوٰۃ والسلام کا جسد اقدس آرام فرما ہے وہ تمام روئے زمین سے افضل ہے، صاحب دُر مختار فرماتے ہیں :

ما ضم اعضاء ه عليه الصلوٰة والسلام فانه افضل مطلقاً حتی من الکعبة و العرش و الکرسی.

(در المختار، 2 : 626)

وہ حصہ زمین جو جسد اقدس سے ملا ہوا ہے وہ مطلقاً افضل ہے، یہاں تک کہ کعبہ عرش اور کرسی سے بھی افضل ہے۔

امام شافعی فرماتے ہیں کہ قاضی عیاض رحمۃ اللہ علیہ نے اجماع امت سے نقل کیا ہے کہ جس جگہ اعضاء مبارک ملے ہوئے ہیں وہ کعبہ سے بھی افضل ہے، اسی طرح امام عقیل حنبلی سے منقول ہے کہ یہ جگہ عرش سے بھی افضل ہے۔

(رد المختار، 2 : 626)

چونکہ عرش و کرسی بھی مخلوق ہے اور تمام مخلوقات میں افضل حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ذات مبارکہ ہے اس لیے کوئی اشکال نہیں کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی قبر انور کا وہ حصہ جو آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے جسد اقدس سے ملا ہوا ہے وہ عرش و کرسی سے بھی افضل ہے۔ اس پر اجماع امت ہے اور اجماع نص قطعی ہوتا ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

تاریخ اشاعت: 2011-09-17


Your Comments