اگر بندہ نماز میں‌ قومہ نہ کرے تو کیا سجدہ سہو کر لینے سے نماز ہوجائے گی؟

سوال نمبر:1123
اگر بندہ نماز میں‌ قومہ نہ کرے یعنی رکوع کے بعد سیدھا سجدے میں چلا جائے تو سجدہ سہو کر لینے سے نماز ہوجائے گی؟

  • سائل: محمد اکرممقام: تلہ گنگ
  • تاریخ اشاعت: 13 جولائی 2011ء

زمرہ: عبادات  |  نماز کے مفسدات  |  نماز

جواب:

ولو ترک القومة ساهيا بان انحط من الرکوع ساجداً ففی فتاویٰ قاضيخان ان عليه السجود عند ابی حنيفة و محمد.

(فتح القدير، جلد 1، صفحه 438)

حضرت امام اعظم ابو حنیفہ اور امام محمد کے نزدیک اگر بھول کر قومہ نہ کیا یعنی رکوع سے سیدھا سجدے میں چلا گیا تو فتاویٰ قضیخان میں لکھا ہے کہ اس پر سجدہ سہو واجب ہے۔ سجدہ سہو کا ترک ہوجانے پر لوٹانا واجب ہے۔ اگر قصداً کوئی واجب چھوڑا تو نماز کا اعادہ واجب ہے، بھول کر چھوڑا تو سجدہ سہو کرنے سے نماز درست ہو گی۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟