نماز وتر میں دعائے قنوت پڑھنے کے لئے تکبیر کیوں کہی جاتی ہے؟

سوال نمبر:831
نماز وتر میں دعائے قنوت پڑھنے کے لئے تکبیر کیوں کہی جاتی ہے اور اس کے لئے ہاتھ اٹھانے کادرست طریقہ بھی بتا دیں کہ کیا ہاتھ نیچے لے جاکر اٹھائے جائیں یابغیر نیچے لے جائے اٹھا کر کانون کی لو کولگا لیے جائیں۔

  • سائل: فیصل اکرممقام: نواب شاہ، سندھ، پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 29 مارچ 2011ء

زمرہ: زکوۃ  |  نماز وتر

جواب:
نماز وتر میں تکبیر اس لیے کہی جاتی ہے کیونکہ آقا علیہ الصلوۃ والسلام کا فرمان ہے :

لاترفع الايدی الا فی سبع مواطن.

کہ ہاتھ نہ اٹھایا جائے مگر سات جگہوں میں۔

(شامی، 1 : 506)

  • تکبیر تحریمہ
  • دعائے قنوت
  • تکبیرات عیدین
  • استلام الحجر
  • صفا مروہ میں
  • عرفات میں
  • شیطان کو کنکریاں مارنے کے وقت

یہ سنت ہے۔

مسنون طریقہ یہ ہے کہ ہاتھ نیچے لیے جائے بغیر اٹھا کر کانوں کی لو تک لگائے جائیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟