وقت کی کمی کے سبب رکوع و سجود کی تسبیحات ایک بار پڑھنا جائز ہے؟

سوال نمبر:5092
السلام علیکم! اگر نماز کا وقت کم ہونے کی صورت میں کیا رکوع و سجود کی تسبیحات ایک بار پڑھ لینے سے نماز میں کوئی اثر پڑتا ہے؟

  • سائل: کریممقام: لاہور
  • تاریخ اشاعت: 15 اکتوبر 2018ء

زمرہ: نماز  |  نماز کی سنتیں

جواب:

رکوع و سجود میں تین تین بار تسبیحات پڑھنا سنت ہے، ایک بار پڑھنے سے بھی نماز ہو جائے گی مگر یہ مناسب نہیں۔ تین بار تسبیحات کی ادائیگی میں زیادہ وقت نہیں لگتا، اس لیے کوشش کریں کہ تسبیحات تین تین بار ہی ادا کریں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟