Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا دو قربانیوں کا گوشت اکٹھے تقسیم کیا جاسکتا ہے؟

کیا دو قربانیوں کا گوشت اکٹھے تقسیم کیا جاسکتا ہے؟

موضوع: قربانی   |  مسائل قربانی

سوال پوچھنے والے کا نام: چوہدری معیز خالد       مقام: ہری پور، ہزارہ، پاکستان

سوال نمبر 4349:
السلام عليكم! ایک، شخص 2 قربانیاں کرتا یا 2 حصہ ہوتے ہیں کیا وہ دنوں حصوں میں 3 ،3 جگہ گوشت تقسیم کرے گا

جواب:

قربانی کا گوشت تین (3) حصوں میں تقسیم کرنا مستحب، پسندیدہ اور افضل عمل ہے۔ اس طرح دو حصے صدقہ ہو جاتے ہیں‌ اور ایک حصہ ذاتی استعمال کے لیے بچ جاتا ہے۔ آپ اپنی آسانی کے ساتھ جیسے چاہیں قربانیوں کا گوشت تقسیم کرسکتے ہیں۔ دونوں قربانیوں کا گوشت اکٹھا کر کے تین حصوں میں تقسیم کرلیں‌ یا ان کو الگ الگ تقسیم کر لیں، شرعِ متین نے اس سلسلے میں کوئی پابندی نہیں‌ لگائی۔ اس لیے اپنی سہولت کے مطابق کوئی ایک تقسیم اپنا سکتے ہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2017-08-19


Your Comments