کیا بینک سے قرض‌ لے کر گھر بنایا جا سکتا ہے؟

سوال نمبر:2591
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ میں‌ کویت میں‌ ملازمت کرتا ہوں کیا میں بینک سے قرض لے کر پاکستان میں‌ گھر بنا سکتا ہوں، کیا یہ سود تو نہیں‌ ہو گا؟

  • سائل: وحید مقام: کویت
  • تاریخ اشاعت: 22 مئی 2013ء

زمرہ: جدید فقہی مسائل  |  قرض   |  سود

جواب:

بینک والے اگر جتنے پیسے آپ کو بطور قرض دیں اتنے ہی واپس لیں تو پھر سود نہیں ہو گا۔ آپ قرض لے سکتے ہیں اس کو قرض حسنہ کہتے ہیں۔ اگر وہ آپ کو قرض اس شرط پر دیں کہ متعین مدت کے بعد آپ نے اس قرض پر اضافہ کر کے دینا ہے پھر سود ہو گا جو جائز نہیں ہے۔ مثلا وہ آپ کو 5 لاکھ روپے دیتے ہیں اور سال یا دو سال بعد 5 لاکھ ہی واپس لیتے ہیں پھر تو جائز ہے دوسری صورت اگر وہ کہیں کہ 5 لاکھ لے لو سال یا دو سال بعد 6 لاکھ واپس کر دینا یہ سود ہے جو جائز نہیں ہو گا۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟