حج کی رقم پر زکوۃ فرض ہے یا نہیں؟

سوال نمبر:946
حج کی رقم پر زکوۃ فرض ہے یا نہیں؟

  • سائل: محمد حفیظمقام: اٹک، پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 04 مئی 2011ء

زمرہ: زکوۃ  |  وظائف  |  عبادات

جواب:
اس میں دو باتیں ہیں :

1۔ جو رقم حج کی نیت سے کسی ایجنٹ کو یا بنک میں جمع کرائی جاتی ہے اس پر زکوۃ فرض نہیں ہے۔

2۔ دوسری بات یہ ہے کہ حج کی نیت سے رقم الگ کر دی جائے لیکن کسی بنک یا ایجنٹ کو نہیں دی ہے تو اس پر ایک سال گزرنے پر زکوۃ فرض ہے۔

بنک کی طرف سے اکثر حاجیوں کو ایئر پورٹ یا وہاں پہنچنے پر کچھ رقم خرچ کرنے کے لیے واپس کر دی جاتی ہے، اگر وہ رقم آپ کے پاس محفوظ ہے اور اس پر سال پورا ہوگیا تو اس پر زکوۃ فرض ہے اور اگر خرچ ہو گی تو کوئی حرج نہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • وطن سے محبت کی شرعی حیثیت کیا ہے؟