Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا کوئی شخص بس میں ذکر کر سکتا ہے جبکہ بس میں گانے وغیرہ لگے ہوں؟

کیا کوئی شخص بس میں ذکر کر سکتا ہے جبکہ بس میں گانے وغیرہ لگے ہوں؟

موضوع: درود و سلام   |  ذکر

سوال پوچھنے والے کا نام: عبداللہ خان       مقام: پاکستان

سوال نمبر 872:
اگر کوئی شخص گاڑی میں ذکر یا درود شریف پڑھ کر رہا ہو اور گاڑی والا گانے لگا دے تو کیا اس صورت میں ذکر یا درود شریف پڑھ سکتے ہیں؟ کہیں ذکر یا درود شریف پڑھنے کی صورت میں بے ادبی تو نہیں ہو رہی؟

جواب:
صورت مسئولہ میں آپ اپنا ذکر و اذکار اور درود شریف جاری رکھیں اور کم از کم ڈرائیور سے اتنا ضرور کہیں کہ اس چیز کو بند کر دے یا آواز آہستہ کر دے۔ اگر مان جائے تو ٹھیک ہے ورنہ لڑائی جھگڑے کی ضرورت نہیں ہے۔

اس عمل میں کوئی بے ادبی نہیں ہے اگر اس دوران درود شریف یا اذکار جاری رکھ سکتے ہیں تو بہتر ہے اور اگر ڈسٹربنس زیادہ ہو تو پھر خاموشی اختیار کریں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

تاریخ اشاعت: 2011-04-04


Your Comments