کیا ماہ محرم و رمضان میں‌ قبروں‌ کی صفائی کرنا شرعی حکم ہے؟

سوال نمبر:5180
السلام علیکم! محرم اور رمضان کے مہینے میں‌ قبرستان جا کر قبروں‌ کی صفائی کرنا شرعی حکم ہے؟

  • سائل: صادق قریشیمقام: راولپنڈی
  • تاریخ اشاعت: 03 دسمبر 2018ء

زمرہ: معاشرت

جواب:

قبرستان میں مدفون افراد کو بےحرمتی سے بچانے کے لیے قبرستان کی دیکھ بھال کرنا شرعاً نہ صرف جائز بلکہ مندوب عمل ہے، اس عمل کی ادائیگی کے لیے شریعت نے کسی خاص دن یا مہینے کا تعین نہیں کیا، اس لیے ہمیں بھی کوئی دن متعین کرنے کی اجازت نہیں بلکہ ہر شخص اپنی سہولت اور مصروفیت کے مطابق کسی بھی دن، کسی بھی وقت والدین یا دیگر عزیز و اقارب کی قبروں پر صفائی ستھرائی کے لیے جاسکتا ہے۔ اگر کوئی ماہِ رمضان یا ماہِ محرم میں سہولت و آسانی کے ساتھ قبرستان جاتا ہے‘ قبروں کی صفائی کرتا ہے اور فاتحہ خوانی کرتا ہے تو شرعاً ایسا کرنا جائز ہے۔ تاہم یہ تمام امور عام دنوں میں بھی کیے جاسکتے ہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • وطن سے محبت کی شرعی حیثیت کیا ہے؟