Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - جنتری، فال یا ستاروں کی چال دیکھ کر بچوں کے نام رکھنا کیسا ہے؟

جنتری، فال یا ستاروں کی چال دیکھ کر بچوں کے نام رکھنا کیسا ہے؟

موضوع: اسلامی نام

سوال پوچھنے والے کا نام: حماد الدین نوری       مقام: کولے گاؤں، ہندوستان

سوال نمبر 4928:

السلام علیکم سر! بعض لوگ جنتری، فال یا ستاروں کی چال دیکھ کے بچوں کے نام رکھتے ہیں، کیا ایسا کرنا جائز ہے؟

جواب:

رسول اﷲ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے با معنی اور اچھا نام رکھنے کا حکم دیا ہے۔ امام طوسی روایت کرتے ہیں:

جَاءَ رَجُلٌ إِلَی النَّبِيِّ صلی الله علیه وآله وسلم فَقَالَ یَارَسُوْلَ اﷲِ مَا حَقَّ إِبْنِيْ هٰذَا؟ قَالَ (صلی الله علیه وآله وسلم) تَحَسَّنَ إِسْمُهٗ وَأدَّبَهٗ وَصَنَعَهٗ مَوْضِعاً حَسَناً.

ایک شخص رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی بارگاہ میں حاضر ہوکر عرض گزار ہوا: یارسول اللہ ( صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ) میرے اس بچے کا مجھ پر کیا حق ہے؟ آپ ( صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ) نے فرمایا: تو اس کا اچھا نام رکھ، اسے آداب سکھا اور اسے اچھی جگہ رکھ (یعنی اس کی اچھی تربیت کر)۔

محمد بن أحمد صالح، الطفل في الشریعة الاسلامیة: 74، مصر: قاهرة

اور حضرت ابو درداء رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا:

إِنَّکُمْ تُدْعَوْنَ یَوْمَ الْقِیَامَةِ بِأَسْمَائِکُمْ وَأَسْمَاءِ آبَائِکُمْ فَأَحْسِنُوا أَسْمَائَکُمْ.

روزِ قیامت تم اپنے ناموں اور اپنے آباء کے ناموں سے پکارے جاؤ گے اس لیے اپنے نام اچھے رکھا کرو۔

  1. أحمد بن حنبل، المسند، 5: 194، رقم: 21739، مصر: مؤسسة قرطبة
  2. أبي داؤد، السنن، کتاب الأدب، باب في تغیر الأسماء، 4: 287، رقم: 4948، بیروت: دار الفکر
  3. دارمي، السنن، 2: 380، رقم: 2694، بیروت، لبنان: دار الکتاب العربي

مذکورہ بالا روایات سے معلوم ہوا کہ رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے نہ صرف اچھے ناموں کو پسند فرمایا بلکہ اچھے نام رکھنے کا حکم بھی دیا اور اسے بچے کا پیدائش کے بعد اولین حق قرار دیا۔ ستارے، جنتری یا فال کے ذریعے نام رکھنا تواہم پرستی ہے اور شرعِ اسلامی میں تواہمات کی کوئی حقیقت نہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2018-06-28


Your Comments