Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - نامحرم عورت سے قرآن سیکھنا کیسا ہے؟

نامحرم عورت سے قرآن سیکھنا کیسا ہے؟

موضوع: جدید فقہی مسائل  |  تلاوت‌ قرآن‌ مجید

سوال پوچھنے والے کا نام: سرور خان       مقام: میلان، اٹلی

سوال نمبر 4541:
السلام علیکم علامہ صاحب! برائے مہربانی رہنمائی فرمائیں کہ کیا ایک بالغ مرد کا فون یا ویڈیو کال کے ذریعہ کسی نامحرم عورت سے قرآن سیکھنا جائز ہے؟ جزاک اللہ خیراََ

جواب:

اسلام کے صدرِ‌ اول سے لیکر دورِ حاضر تک لاکھوں‌ پردہ نشیں مسلم خواتین نے حدودِ شریعت میں رہتے ہوئے علم و عمل، فنون اور میدانِ جہاد تک ہر شعبہ زندگی میں‌ حصہ لیا ہے۔ خواتین نے اسلامی معاشرہ کی تعمیر و ترقی میں‌ ہمیشہ اہم کردار ادا کیا ہے۔ علمی میدان میں‌ صحابیات سے لیکر آج تک خواتین نے گراں‌ قدر خدمات سرانجام دی ہیں‌۔ صحابہ کرام، تابعین اور آئمہ نے خواتین سے روایات بھی نقل کیں‌ اور علوم بھی حاصل کیے ہیں۔ اس لیے ہماری دانست میں‌ شرعی پردہ کا اہتمام کرتے ہوئے خواتین سے قرآنِ مجید پڑھنے میں کوئی حرج نہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2017-12-20


Your Comments