اگر بیوی شوہر کو کسی محرم رشتے سے پکارے تو کیا حکم ہے؟

سوال نمبر:4540
السلام علیکم! اگر شادی سے پہلے لڑکے لڑکی کا دور کا ماموں بھانجی کا رشتہ ہو اور شادی کے بعد بھی لڑکی مزاق میں یا پیار سے لڑکے کو ماموں بولے تو کیا یہ شرعاً جائز ہے؟ اس کے بارے میں کیا حکم ہے؟

  • سائل: محمد عبداللہمقام: لاہور
  • تاریخ اشاعت: 20 دسمبر 2017ء

زمرہ: متفرق مسائل

جواب:

بیوی کے ان الفاظ سے نکاح پر کوئی اثر نہیں‌ پڑا، لیکن اس سے رشتے کا تقدس پامال ہو رہا ہے۔ میاں‌ بیوی کا ایک دوسرے کو مقدس اور محرم رشتوں سے پکارنا ممنوع ہے۔ اس لیے بیوی آئندہ احتیاط کرے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟