Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - اگر بیوی شوہر کو کسی محرم رشتے سے پکارے تو کیا حکم ہے؟

اگر بیوی شوہر کو کسی محرم رشتے سے پکارے تو کیا حکم ہے؟

موضوع: متفرق مسائل

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد عبداللہ       مقام: لاہور

سوال نمبر 4540:
السلام علیکم! اگر شادی سے پہلے لڑکے لڑکی کا دور کا ماموں بھانجی کا رشتہ ہو اور شادی کے بعد بھی لڑکی مزاق میں یا پیار سے لڑکے کو ماموں بولے تو کیا یہ شرعاً جائز ہے؟ اس کے بارے میں کیا حکم ہے؟

جواب:

بیوی کے ان الفاظ سے نکاح پر کوئی اثر نہیں‌ پڑا، لیکن اس سے رشتے کا تقدس پامال ہو رہا ہے۔ میاں‌ بیوی کا ایک دوسرے کو مقدس اور محرم رشتوں سے پکارنا ممنوع ہے۔ اس لیے بیوی آئندہ احتیاط کرے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2017-12-20


Your Comments