کیا سوتیلی ماں کی بہن سے نکاح جائز ہے؟

سوال نمبر:4530
کیا میں اپنی سوتیلی ماں کی بہن یعنی کہ خالہ سے نکاح کر سکتا ہوں

  • سائل: عقیل احمد شفیقمقام: مالیگاؤں، مہراشٹرا، انڈیا
  • تاریخ اشاعت: 20 نومبر 2017ء

زمرہ: محرمات نکاح

جواب:

اگر سوتیلی ماں سے رضاعت (دودھ پینا) ثابت نہیں ہے تو اس کی بہن شریعت کی نظر میں آپ کی خالہ نہیں ہے‘ اس سے نکاح جائز ہے۔ جس عورت سے نکاح جائز نہیں وہ حقیقی یا رضاعی ماں کی سگی بہن یا ماں شریک بہن یا باپ شریک بہن یا دودھ شریک بہن ہے۔ شریعت کی نگاہ میں انسان پر اس کے باپ کی بیوی ہونے کی وجہ سے صرف سوتیلی ماں حرام ہوتی ہے، سوتیلی ماں کی ماں یا بہن وغیرہ حرام نہیں ہوتی۔ اس لیے اگر آپ نے شیرخوارگی کی عمر میں سوتیلی ماں کا دودھ نہیں پیا تو اس کی بہن سے نکاح جائز ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟