Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کسی کی تعریف کرنے پر شوہر نے بیوی سے کہا ’اُسی کے پاس چلی جا‘ کیا طلاق ہوگئی؟

کسی کی تعریف کرنے پر شوہر نے بیوی سے کہا ’اُسی کے پاس چلی جا‘ کیا طلاق ہوگئی؟

موضوع: طلاق کنایہ

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد علی حسن       مقام: جہلم

سوال نمبر 4490:
اگر بیوی شوہر کے سامنے کسی اور مرد کی تعریف کرے تو شوہر صرف بیوی کو شرمندہ کرنے اور طنز کرنے کی نیت سے کہے کہ "اسی کے پاس چلی جا" تو کیا اس سے نکاح ٹوٹ جاتا ہے؟

جواب:

اگر شوہر نے واقعتاً صرف شرمندہ کرنے کی نیت سے کہا کہ ’اسی کے پاس چلی جا‘ تو کوئی طلاق واقع نہیں ہوئی۔ آئندہ ایسے الفاظ بولنے سے پرہیز کریں۔ مزید وضاحت کے لیے ملاحظہ کیجیے:

کنایہ کے الفاظ سے دی گئی طلاق کب واقع ہوتی ہے

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2017-11-16


Your Comments