Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - اسلام میں‌ کفو کا کیا تصور ہے؟

اسلام میں‌ کفو کا کیا تصور ہے؟

موضوع: مسئلہ کفو

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد رضوان       مقام: اکولہ، ہندوستان

سوال نمبر 4477:
کیا فرماتے ھیں علماء دین ومفتیان شرع متین اس مسئلہ میں کہ پٹھان، شیخ، انصاری، پنجاری، شیخ اور دیشمکھ ایک دوسرے کے کفو ہیں یا نہیں؟

جواب:

اسلام میں موجود کفو کے تصور سے مراد ذات پات اور قوم قبیلہ نہیں ہے۔ قرآنِ‌ کریم اور احادیثِ مبارکہ میں جن عورتوں سے نکاح‌ کو ممنوع قرار دیا گیا ہے ان کے علاوہ کسی بھی عورت سے نکاح کرنا جائز ہے۔ ہر عاقل و بالغ لڑکا، لڑکی اپنی پسند اور رضامندی سے نکاح‌ کر سکتے ہیں‘ خواہ وہ کسی بھی قوم و قبیلے سے ہوں‘ شرعاً کوئی پابندی نہیں‌ ہے۔

جب والدین اور سرپرست رشتہ طے کریں تو اس میں لڑکے لڑکی کی رضامندی، پسند و ناپسند، قد کاٹھ، شکل و صورت اور تعلیم و تربیت کی مناسبت کا خیال ضرور رکھیں تاکہ ان میں ذہنی ہم آہنگی پائی جائے تو اسی کو کفو تصور کیا جائے۔

مزید وضاحت کے لیے ملاحظہ کیجیے:

اسلام میں کفو کا کیا تصور ہے؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2017-11-01


Your Comments