Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا آدھے بازو والی شرٹ پہن کر نماز پڑھنا جائز ہے؟

کیا آدھے بازو والی شرٹ پہن کر نماز پڑھنا جائز ہے؟

موضوع: نماز  |  نماز کے مکروہات

سوال پوچھنے والے کا نام: ایاز محبوب       مقام: ابوظہبی

سوال نمبر 4422:

السلام علیکم مفتی صاحب! میرے دو سوال ہیں:

  1. کیا آدھے بازو والی شرٹ پہن کر نماز پڑھ سکتے ہیں؟
  2. اگر شرٹ یا پینٹ پہ دھاگے کے ساتھ کسی جانور کی شبیہ (تصویر) بنی ہو تو کیا اسے پہن کر نماز پڑھ سکتے ہیں؟

جواب:

مرد کا ستر ناف سے گھٹنوں تک اور عورت کا ہاتھ، پاؤں‌ اور چہرے کو چھوڑ کر پورا بدن ہے اور نماز کی شرط ستر ڈھانپنا ہے۔ لہٰذا جو بھی باوقار لباس سترپوشی کرے اس کو پہن کر نماز ادا کرنا درست ہے۔ اسی طرح ہاف بازو شرٹ بھی باوقار لباس کا حصہ ہو تو پہن کر نماز ادا کرنے میں کوئی حرج نہیں ہے۔

اگر تصاویر فحش و عریاں‌ نہ ہوں‌ تو نماز ہو جاتی ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2017-10-07


Your Comments