اگر بڑے جانور میں‌ قربانی اور عقیقہ جمع ہوں‌ تو ان گوشت الگ الگ تقسیم کیا جائے گا؟

سوال نمبر:4334
قربانی کے بڑے جانور سے عقیقہ بھی کیا جا سکتا ہے۔ میرا سوال یہ ہے کہ حاصل ہونے والے گوشت کو اکٹھا ہی تقسیم کر دیا جائے یا علیحدہ علیحدہ بتا کر تقسیم کیا جائے؟ کہ یہ گوشت قربانی کا ہے اور وہ گوشت عقیقہ کا ہے۔ مہربانی فرما کر اس سوال کا جواب دے کر شفقت فرمائیں۔

  • سائل: ماجد محمودمقام: لاہور
  • تاریخ اشاعت: 17 اگست 2017ء

زمرہ: احکام و مسائلِ عقیقہ

جواب:

گوشت قربانی کا ہو یا عقیقے کا‘ دونوں‌ ہی صدقہ ہیں۔ اس لیے ان کا گوشت الگ الگ کر کے اور بتا کر دینا ضروری نہیں، اگر کوئی ایسا کرے تو اس میں کوئی حرج بھی نہیں۔ بہتر یہ ہے کہ قربانی کی طرح عقیقہ کے گوشت کے بھی تین حصے کیے جائیں۔ ایک حصہ غریبوں کو، ایک رشتہ داروں اور دوستوں کو دے دیا جائے اور ایک خود رکھ لیں۔ اگر کوئی پروگرام ہو تو سارے کا سارا بھی استعمال کر سکتے ہیں، لیکن غرباء، یتامیٰ‌ اور مساکین کا خیال کرتے ہوئے انہیں‌ بھی پروگرام میں شامل کریں تو یہ زیادہ بہتر ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • وطن سے محبت کی شرعی حیثیت کیا ہے؟