اگر نکاح کے گواہان ویڈیو کانفرنس کے ذریعے مجلسِ نکاح میں شریک ہوں تو نکاح کا کیا حکم ہے؟

سوال نمبر:4021
السلام علیکم مفتی صاحب! مجھے نکاح‌ کے بارے میں ایک مسئلہ دریافت کرنا ہے۔ اگر لڑکا، لڑکی اور لڑکی کی ماں ایک جگہ (یورپ) میں‌ موجود ہوں، جبکہ نکاح خوان، نکاح کے گواہان اور لڑکے لڑکی کے رشتےدار دوسری جگہ (پاکستان) میں موجود ہوں تو کیا ویڈیو کانفرنس کے ذریعے کیا گیا نکاح درست ہوگا؟

  • سائل: محمد انیسمقام: نامعلوم
  • تاریخ اشاعت: 20 اکتوبر 2016ء

زمرہ: جدید فقہی مسائل  |  نکاح

جواب:

جدید وسائل اور ذرائع نے دور دراز بیٹھے لوگوں کو دیکھنا اور سننا ممکن بنا دیا ہے۔ اس لیے بعض اوقات مجالسِ نکاح بھی سکائپ وغیرہ کے ذریعے منعقد کی جاتی ہیں۔ اگر ویڈیو کال کے ذریعے ہونے والے نکاح میں نکاح کے ارکان اور شرائط (ایجاب و قبول، ولی کی اجازت، شہادتین اور حق مہر وغیرہ) پورے کیے گئے ہیں تو نکاح منعقد ہو جائے گا، اگر تو ان میں کوئی ایک شے مفقود ہو یا حقیقت کے برعکس کچھ بتایا گیا ہو تو نکاح منعقد نہیں ہوگا۔ اس کی مزید وضاحت کے لیے ملاحظہ کیجیے:

ٹیلی فون یا انٹرنیٹ پر نکاح‌ منعقد ہونے کی کیا شرائط ہیں؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟