Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - نماز کو دین کا ستون کیوں کہا گیا ہے؟

نماز کو دین کا ستون کیوں کہا گیا ہے؟

موضوع: عبادات  |  عبادات

سوال نمبر 389:
نماز کو دین کا ستون کیوں کہا گیا ہے؟

جواب:

نماز کو دین کا ستون کہا گیا ہے، حدیثِ مبارکہ میں ہے :

اَلصَّلَاةُ عِمَادُ الدِّيْنِ، فَمَنْ تَرَکَهَا فَقَدْ هَدَمَ الدِّيْنَ.

عجلونی، کشف الخفاء، 2 : 40

’’نماز دین کا ستون ہے جس نے اس کو ترک کیا پس اس نے پورے دین کو منہدم کیا۔‘‘

حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے نماز کو دین کا مرکزی ستون قرار دیا ہے جس طرح کوئی عمارت بغیر ستون کے قائم نہیں رہ سکتی اسی طرح دین کی عمارت اقامتِ صلوۃ کے بغیر قائم نہیں رہ سکتی۔ دین کی عمارت کو قائم رکھنے کے لیے ضروری ہے کہ بندہ نماز قائم کرے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔


Your Comments