Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا مرد کے لیے سر ڈھانپ کر رکھنا واجب ہے؟

کیا مرد کے لیے سر ڈھانپ کر رکھنا واجب ہے؟

موضوع: معاشرتی آداب

سوال پوچھنے والے کا نام: قدیر رضا       مقام: جلال پور پیر والا

سوال نمبر 3860:
السلام علیکم! عام صورت میں ننگے سر رہنا کیسا ہے؟ کیا ننگے سر رہنے سے بندہ گنہگار ہوتا ہے؟

جواب:

علماء وآئمہ ميں سے كوئى بھى مردوں كے سر ڈھانپنے كے وجوب كا قائل نہيں ہے، ليكن كچھ علماء كرام نے اسے مستحبات ميں شمار كيا ہے، اور انہوں نے لوگوں كے سامنے سر ننگا كرنے كو خلاف مروت قرار ديا ہے۔ مردوں کا سر ڈھانپنا، سر پر عمامہ رکھنا اور ٹوپی پہننا علاقائی رواج یا آب ہوا کے پیش نظر ایک ضرورت ہو سکتی ہے، مگر اسے فرض، واجب یا ایسی سنت قرار نہیں دیا گیا جس کے نہ کرنے سے مرد گنہگار ہوں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2016-04-15


Your Comments