Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا بیوی کو ’میری طرف سے تم فارغ ہو‘ کہنے سے طلاق واقع ہو جاتی ہے؟

کیا بیوی کو ’میری طرف سے تم فارغ ہو‘ کہنے سے طلاق واقع ہو جاتی ہے؟

موضوع: طلاق   |  طلاق بائن

سوال پوچھنے والے کا نام: عاصمہ       مقام: لاہور

سوال نمبر 3856:
السلام علیکم مفتی صاحب! میری دوست کے شوہر نے اسے دو مرتبہ کہا کہ میری طرف سے تم فارغ ہو، کیا ایسا کہنے سے طلاق واقع ہو جاتی ہے؟

جواب:

اگر شوہر نے طلاق کی نیت سے بیوی کو کہا کہ ’میری طرف سے تم فارغ ہو‘ یا بیوی نے طلاق کا مطالبہ کیا تو جواباً شوہر نے کہا ’تم فارغ ہو‘ تو طلاقِ بائن واقع ہوگئی، جس سے ان کا نکاح ختم ہوچکاہے۔ اگر رجوع کرنا چاہتے ہیں اور دوبارہ بطور میاں بیوی کے ایک دوسرے کے ساتھ رہنا چاہتے ہیں تو دوبارہ نکاح کرنا ضروری ہے۔ جواب کی مزید وضاحت کے لیے ملاحظہ کیجیے:

کنایہ کے بعد صریح الفاظ میں‌ دی گئی طلاق کا کیا حکم ہے؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2016-04-09


Your Comments