Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا غیرسید، سید کا کفو ہو سکتا ہے؟

کیا غیرسید، سید کا کفو ہو سکتا ہے؟

موضوع: مسئلہ کفو   |  سیدہ کا غیر سید سے نکاح

سوال پوچھنے والے کا نام: عبید گیلانی       مقام: نامعلوم

سوال نمبر 3696:
السلام علیکم! آپ نے سیدہ کے غیر سید کے ساتھ نکاح کے جواز کا فتویٰ‌ دیا ہے، اس بارے میں میرے کچھ تحفظات ہیں ان کی وضاحت مطلوب ہے۔ کیا کوئی شخص اولادِ نبی کی برابری کر سکتا ہے؟ کوئی آیت یا روایت بیان کر دیں جس میں ہر شخص کو حضور پاک کے برابر کہا گیا ہو؟ ہر شخص کی اولاد کو اولاد رسول (سیدہ فاطمہ اور حسنین کریمین) جیسا کہا گیا ہو؟ جب رسولِ پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنے شہزادوں کو جنت کا سردار بتائیں‌ تو دوسرے لوگ ان کے برابر کیسے ہو سکتے ہیں؟

جواب:

رسول اکرم صلیٰ اللہ علیہ وآلہ وسلم کی چار صاحبزادیاں ہیں اور چاروں ہی ام المؤمنین سیدہ خدیجہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا کے مبارک بطن سے پیدا ہوئیں۔ یہ چاروں سیدزادیاں‌ ہیں۔ رسول اکرم صلیٰ اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ان میں سے دو کا نکاح یکے بعد دیگرے سیدنا عثمان بن عفان رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے کیا، جن میں سیدہ رقیہ اور سیدہ امِ کلثوم رضی اللہ عنہما شامل ہیں۔ آپ صلیٰ اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اپنی تیسری صاحبزادی سیدہ زینب رضی اللہ تعالیٰ عنہا کا نکاح ابوالعاص سے کیا۔ سیدنا عثمان رضی اللہ عنہ اور ابوالعاص دونوں اموی تھے۔ رسول اکرم صلیٰ اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اپنی صاحبزادیوں کا نکاح اموی مردوں کے ساتھ کرنے کے بعد کبھی نہیں فرمایا کہ آج کے بعد کسی ہاشمی لڑکی کا غیرہاشمی لڑکے کے ساتھ نکاح جائز نہیں۔ آپ صلیٰ‌ اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ترجیح اور برتری کی بنیاد نسلی امتیازات اور خاندانی حسب و نسب، جاہ وجلال، مال و زر اور ذات و براردری رکھنے کی بجائے تقویٰ، پرہیزگاری، خوف خدا جیسی صفات عالیہ پر موقوف کی ہے۔

آپ کے سابقہ سوال کے جواب میں بھی ہم نے قرآن و حدیث کی صریح نصوص سے ثابت کیا تھا کہ سیدہ لڑکی کے غیرسید لڑکے کے ساتھ نکاح میں کی شرع میں کوئی ممانعت نہیں، (ملاحظہ ہو: کیا سید کا غیرسید سے نکاح جائز ہے؟)۔ اگر آپ کے پاس ممانعت کی قرآن و حدیث پر مبنی دلیل موجود ہے تو پیش کردیں۔ اگر آپ کے دلائل ہماری دلیل سے زیادہ قوی ہوئے تو ہم اپنے مؤقف سے رجوع کرنے میں کوئی عار محسوس نہیں کریں گے۔

معاذاللہ ہمارا دعویٰ اور عقیدہ یہ نہیں ہے کہ کوئی شخص رسول اکرم صلیٰ اللہ علیہ وآلہ وسلم یا آپ صلیٰ اللہ علیہ وآلہ وسلم کی اولاد علیہم السلام کی برابری کرسکتا ہے۔ اگر ایک پڑھی لکھی سید زادی کا نکاح اس کی پسند کے پڑھے لکھے غیرسید کے ساتھ کر دیا جائے تو غیرسید، سید نہیں بن جائے گا بلکہ یہ شرعی احکام کے عین مطابق عمل ہوگا۔ اس کی بجائے ایک پڑھی لکھی سیدہ کا نکاح زبردستی ایک ان پڑھ، بےروزگار اور جرائم پیشہ کے ساتھ صرف اس لیے کر دیا جائے کہ ہماری انا غیرسید کے ساتھ نکاح کی اجازت نہیں دیتی، شرعاً یہ نکاح جرم ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2015-08-24


Your Comments