Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا روزہ کی حالت میں نہر میں یا پول نہانا جائز ہے؟

کیا روزہ کی حالت میں نہر میں یا پول نہانا جائز ہے؟

موضوع: روزہ

سوال پوچھنے والے کا نام: محمداسد زماں       مقام: گوجرانوالہ

سوال نمبر 3684:
السلام علیکم محترم مفتی صاحب! مجھے آپ سے یہ پوچھنا ہے کہ روزہ کی حالت میں نہر میں یا پول نہانا جائزہے کیا؟ کیا اس سے روزہ ٹوٹ جاتا ہے؟ کیا ڈوبکی لگانے سے روزہ ٹوٹ جاتا ہے؟ مہربانی فرما کر مفصل جواب عنائت فرمائیں!

جواب:

حالتِ روزہ میں نہر یا پول میں نہانے کی ممانعت تو نہیں ہے، تاہم اس بات کی احتیاط لازم ہے کہ نہاتے ہوئے کان، ناک یا منہ میں پانی نہ جائے۔اگر ڈبکی لگانے سے پانی حلق سے نیچے اتر گیا تو روزہ ٹوٹ جائے گا۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2015-08-17


Your Comments