کیا شرعی معذور نمازِمغرب کا وضو غروبِ آفتاب سے پہلے کرسکتا ہے؟

سوال نمبر:3602
السلام علیکم! گزارش ہے کہ شرعی معذور مغرب کی نماز کا وضو کس وقت کرے؟ اگر مغرب کا وقت شروع ہونے کے بعد وضو کرتا ہے تو جماعت جانے کا اندیشہ ہے۔ لہٰذا راہنمائی فرمائی جائے کہ مغرب کا وضو کتنی دیر پہلے کیا جاسکتا ہے؟

  • سائل: محمد حنیفمقام: بریڈفورڈ
  • تاریخ اشاعت: 06 مئی 2015ء

زمرہ: احکامِ طہارت و صلوٰۃ برائے معذور

جواب:

ایسا شخص جس کو عذر شرعی ہواس کے لیے حکمِ شریعت یہ ہے کہ وہ ہر نماز کے لیے نماز کے وقت میں تازہ وضو کر کے نماز ادا کرے گا۔ ایک وضو کے ساتھ ایک سے زائد نمازیں نہیں پڑھ سکتا۔ مغرب کی نماز کے لیے وہ غروبِ آفتاب کے وقت وضو کرسکتا ہے، اور اوقاتِ نماز کی موجودگی میں غروبِ آفتاب کا وقت جاننا مشکل نہیں۔ اگر وہ وضو کرتے ہوئے زیادہ دیر لگاتا ہے تو اسے چاہیے کہ جب سورج غروب ہو رہا ہو تو وضو کر لے، تاکہ نمازِ باجماعت میں شامل ہو سکے۔ بقیہ نمازوں میں تو مشکل نہیں تاہم مغرب میں کافی احتیاط کی ضرورت ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • وطن سے محبت کی شرعی حیثیت کیا ہے؟